Blog

‏” دل کی ہر بات نہیں کہی جا سکتی_________شاید اسی واسطے ہی ” خدا” نے خاموش آہیں اور سسکیاں بنائیںآنسو پیدا کیے؛ طویل نیند بنائیاور اسی خاطر بے کیف مسکراہٹ اور وقتِ الوداع ہاتھوں کو ہلانے کا سامان پیدا کیا‏”

‏جب سورج ڈوبے سانجھ بھئے
اور پھیل رھا اندھیارا ھو
کسی ساز کی لے پر چَھنن چَھنن
کسی گیت کا مکھڑا جاگا ھو

اس تال پہ ناچتے پیڑوں میں
اک چپ چاپ سی بہتی ندیا ھو
اُس سندر شیتل شانت سَمے
ھاں بولو بولو پھر کیا ھو؟
وہ جس کا ملنا ناممکن!
وہ مل جائے تو کیسا ھو؟

کہو مجھ سے محبت ہے۔۔۔

‏کہومجھ سے محبت ہے
تمہیں مجھ سےمحبت ہے
سمندر سےکہیں گہری
ستاروں سےسوا روشن
پہاڑوں کیطرح قائم
ہواؤں کیطرح دائم
زمیں سےآسماں تک جس قدر اچھےمناظر ہیں
محبت کےکنائے ہیں
وفا کےاستعار ے ہے ہمارےہیں
ہمارےواسطے یہ چاندنی راتیں سنورتی ہیں سنہرا دن نکلتاہے
محبت جسطرف جائے
زمانہ ساتھ چلتاہے

اعتبار

خوف ہوتا نہ کبھی…….ساتھ چھوٹ جانے کا
کاش دریا کا………………کوئی ایک کنارا ہوتا

اس کے جذبوں میں تھا ہر شخص کا حصہ ورنہ
وہ کسی ایک کا ہوتا……………..تو ہمارا ہوتا

Create your website with WordPress.com
Get started
%d bloggers like this: